0

حکومت کا آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ادویات کے خام مال پر عائد سیلز ٹیکس ختم کرنے پر غور


اسلام آباد: وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال 2022-2023 کے بجٹ میں ادویہ سازی میں استعمال ہونے والے خام مال کی درآمد پر عائد سیلز ٹیکس ختم یا شرح کم کرنے پر غور شروع کردیا ہے۔ وفاقی حکومت نے آئی مالی سال کے بجٹ میں فارما سوٹیکل سیکٹر کو ریلیف دینے کا اصولی فیصلہ کیا ہے جس کے تحت ملک میں ادویات سازی میں استعمال ہونے والے خام مال کی درآمد پر عائد کردہ سترہ فیصد سیلز ٹیکس واپس لینے یا اسکی شرح میں کمی کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔اس حوالے سے فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) کے ذرائع نے بتایا کہ گزشتہ حکومت نے ادویات کے خام مال کی درآمد پر سترہ فیصد قابل ریفنڈ سیلز ٹیکس عائد کیا تھا جسے ادویات سازی کیلئے منگوائے جانیوالے خام مال کے استعمال سے تیار ہونیوالی ادویات کی فروخت پر ریفنڈ کلیم کرکے واپس لیا جاسکتا تھا تاہم اس پر فارموسٹیکل سیکٹر کو شدید تحفظات تھے اور ادویات مہنگی ہوگئی تھیں کیونکہ ادویات کے خام مال پر ادا کردہ سترہ فیصد ٹیکس کی ادویات تیار ہونے پر ریفنڈز کے سسٹم میں بہت پیچیدگیاں تھیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں