0

حکومتیں لوگوں کی ذہن سازی کے لیے میٹا ورس کو استعمال کرسکتی ہیں، ماہرین


کیلیفورنیا: ٹیکنالوجی کمپنی میٹا کے سی ای او مارک زکر برگ کا خیال ہے کہ مستقبل میں ایک ارب لوگ حقیقی دنیا کو چھوڑ کر ڈیجیٹل دنیا کو اپنا لیں گے لیکن ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ حکومتوں کی جانب سے لوگوں کی ذہن سازی کرنے لیے میٹا ورس کو استعمال کیا جاسکتا ہے۔میٹا ورس کا خیال پہلی بار 1992 کی سائنس فکشن کتاب اسنو کریش میں پیش کیا گیا تھا جو ایک ورچوئل دنیا ہوتی تھی اور لوگ وہاں اپنا گھر چھوڑے بغیر رہا کرتے تھے، کام کرتے تھے اور کھیلتے تھے اور کئی لوگوں کا خیال ہے کہ دنیا اس ہی جانب گامزن ہے۔اس میدان میں 17 سال کا تجربہ رکھنے والے برائن شسٹر، جنہوں نے یوتھرورس نامی ڈیجیٹل ورلڈ بنائی ہے، کا کہنا تھا کہ اگر میٹا ورس کو عوام کی طاقت کو دبانے کے لیے استعمال کیا گیا تو یہ ورچوئل دنیا ایک غیر منصفانہ ریاست کا روپ دھار لے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں